انڈونیشین صدر کی ذوالفقار کے کیس پر ہمدردی سے غور کرنے کی یقین دہانی

صدر ممنون حسین اور انڈونیشیا کے صدر کے درمیان ہونی والی ملاقات میں پاکستان نے ذو الفقار کا معاملہ اٹھایا . فوٹو : فائل  اسلام آباد: انڈونیشیا کی جیل میں قید ذوالفقار کی وطن واپسی کے لیے انڈو نیشین صدرجو کو ویدودو نے ہمدردی سے غور کرنے کی یقین دہانی کرادی۔ایکسپریس نیوز کے مطابق ایوان صدر میں صدر پاکستان ممنون حسین اور انڈونیشیا کے صدر جو کو ویدودو کے درمیان ہونی والی ملاقات میں انڈونیشیا میں قید پاکستانی شہری ذو الفقار کے معاملے پر بھی بات ہوئی۔ انڈو نیشین صدر نے یقین دہانی کرائی ہے کہ ہماری حکومت  ذوالفقار کے کیس پر ہمدردی سے غورکرے گی۔اس ملاقات کے بعد امید کی ایک کرن روشن ہوگئی ہے کہ ذوالفقار اپنی زندگی کے آخری لمحات اپنے وطن  واپس آ کر گزار سکے گا۔اس خبر کو بھی پڑھیں :عالمی امن اورخوشحالی کے لیے ہرکسی کو اپنا کردارادا کرنا ہوگاخیال رہے کہ ایکسپریس نیوز نے ذوالفقار کے حق میں آواز بلند کی ہے، قومی اسمبلی، سینیٹ اور وزیر خارجہ نے بھی ذوالفقار کی واپسی کے مطالبے کی آوازبلند کی۔یہ بھی پڑھیں : ذوالفقار کی رہائی کے لیے کوشش کررہے ہیںذوالفقار 14 سال سے انڈونیشین جیل میں بغیر ثبوتوں کے منشیات کے کیس میں قید کی سز اکاٹ رہاہے اور اب جگر کے  کینسر کی وجہ سے اس کے پاس زندگی کے صرف 3 سے 6 ماہ باقی ہیں جس پر انڈونیشین حکومت سے معافی کی اپیل ہے۔Let’s block ads! (Why?)

Comments are closed.